برسات اور انفکشن

۔ اُردُو بلاگAHS Foundation

موسم برسات اور اس میں ہونے والی بیماریاں

سعد وحید 

برسات کا موسم جراثیم اور بیکٹیریا کی نشونما کے لیے بہت ہی بہترین ثابت ہوتا ہے۔ پانی میں پیداہونے والے یہ بیکٹیریا بہت سی بیماریوں کا باعث بنتے ہیں اور یہ بیماریاں بہت سارے لوگوں کو متاثر کرتی ہیں۔ ان بیماریوں میں نزلہ ،زکام ، ملیریااور معدے کی بیماریاں شامل ہیں۔برسات میں ہونے والی عام بیماریاں نزلہ ، کھانسی اور بخار:

وائرل بخار اور عام نزلہ☆

وائرل بخار اور نزلہ خطرناک بیماری نہیں لیکن برسات کے موسم کی سب سے عام اور پریشان کرنے والی بیماری ہے۔ بارش میں زیادہ بھیگنے اور بار بار بھیگنے کی وجہ سے یہ انفیکشن ہوجاتا ہے۔اور اگر یہ انفکشن بچوں میں ہو جائے تو خطرناک ثابت ہو سکتا ہے کیوں کے بچوں میں قوتِ مدافعت کم ہوتی ہے .اس لیے بچوں کو اس موسم میں بھیگنے مٹی اور کیچڑ میں کھیلنے سے روکیں.

ڈائریاФ

یہ بیماری وائرل یا بیکٹیریل دونوں طرح کے انفیکشن کی وجہ ہوسکتی ہے ۔ عام طور پر اس کے جراثیم منہ   کے ذریعے آنتوں تک پہنچ جاتے ہیں جسکی وجہ مضر صحت کھانا ہوتا ہے ۔ زیادہ لکوڈ استعمال کر کے اسپر قابوپایا جاسکتا ہے لیکن بہت زیادہ الٹیوں کی صورت میں اسپتال میںایڈمیشن ضروری ہے تاکہ ڈرپ کے ذریعے علاج کیا جائے ورنہ بلڈ پریشرحد سے زیادہ گرنے کا خطرہ ہوتا ہے۔ملیریا:پانی میں پرورش پانے والے مچھر ملیریا کا باعث بنتے ہیں ۔ ملیریا کے مرض میں بخار ، سردی اور فلو کی طرح کیفیت ہو جاتی ہے۔ فوری علاج نہ کرنے کی صورت میں بیماری شدت اختیار کرلیتی ہے۔

ٹائیفائڈФ

ٹائیفائڈ بیکٹیریل انفیکشن کی وجہ سے ہوتا ہے ۔ یہ بھی مضر صحت کھانے اور آلودہ پانی کی وجہ سے ہوتا ہے۔ اس لیے برسات کے موسم میں خاص طور پر باہر کی چیزوں خاص طور پر کھلی ہوئی چیزیں کھانے سے پرہیز کرناچاہئیے.ٹائیفائیڈ کے بارے میں پہلے تفصیل سے لکھا جا چکا ہے.تفصیلات کے لیے پہلے صفحے کا مطالعہ کریں.

۔فنگل انفیکشن

گیلے موسم کی وجہ سے یہ انفیکشن اکثران لوگوں میں ہوجاتا ہے جو عام طور پر زیادہ وقت کے لیے گیلے کپڑے یا جوتے پہنے رہنے رہتے ہیں۔زیادہ دیر پانی میں رہنے کی وجہ سے بھی یہ انفیکشن ہوجاتا ہے۔

احتیاط۔○

بارش کے موسم میں اکثر صاف پانی کے ساتھ گندہ پانی مل جاتا ہے اورپینے کے پانی کو بھی آلودہ کردیتا ہے ۔ ایسے میں پانی کو ابال کر اور پھٹکری سے صاف کر کےپئیں یا برسات کے موسم میں منرل واٹر کا استعمال کریں۔۔ گھر کے قریب ،گملوں یا دوسرے برتنوں میں پانی جمع نہ رہنے دیں تاکہ مچھروں کی افزائش نہ ہونےپائے۔ مچھر مکھی اور لال بیگ کو ختم کرنے کے لیے دوا کا استعمال کریں۔۔۔ سلاد اور پتے والی سبزیوں کو اچھی طرح صاف پانی سے دھو کر استعمال کریں ۔ ہری سبزیوں کو دس منٹ کے لیے نمک کے پانی میں بھگو کر رکھنے سے بھی جراثیم ختم ہوجاتے ہیں۔ باہر کی چاٹ ، سلاد یا کٹے ہوئے پھل ہرگز نہ کھاسکیں ۔۔ گرم اور نمی والے موسم میں کھلے جوتے نہ پہنیں تاکہ فنگل  انفیکشن سے محفوظ رہیں۔۔ گیلے کپڑے نہ پہنیں رہیں تاکہ جلد اور ناخنوں کو فنگل انفیکشن سے محفوظ رکھ سکیں۔۔ شوگر کے مریض ننگے پیر نہ چلیں کیونکہ مٹی میں بہت سارے جراثیم موجود ہوتے ہیں ۔۔ کھانے پینے کی چیزوں کو ہاتھ لگانے سے پہلے اور ٹوائلٹ استعمال کرنے کے بعد ہاتھوں کو اچھی طرح دھوئیں۔

دوسروں کے ساتھ بانٹیں

دوسروں کے ساتھ بانٹیں
en_USEnglish
en_USEnglish