دور حاضر کا مسلمان

۔ اُردُو بلاگAHS Foundation

دور حاضر کا مسلمان

دورِ حاضر کا مُسلمان!

افلاک تلک تھا شور ، مومن کی اذاں کا
کعبہ تو رہا کعبہ ، کِسری ٰ تھا مُسلماں کا

عادت کا نمازی اور ، تقویٰ کا نمازی اور
کربل میں بھی دیکھا تھا، سجدہ تیرے ایماں کا

جب اہلِ قُرآں اپنی توقیر سے واقف تھا
تب غُنچہ و لالہ تھا ، یہ حق کے گُلستاں کا

کردار کا غازی تھا ، تلوار کا جادُو گر
یہ فاتح مُسلسل تھا ، ہر گوشہ ءِ بُت خاں کا

یہ غوث و قُطب بھی تھا ، ابدالِ زمانہ بھی
جب تک یہ نمازی تھا ، مومن تھا مُسلماں تھا

مومن سے مُسلماں تک، پھر اس سے فقط انساں
انساں سے بھی گر کر اب ، بندہ ہُوا شیطاں کا

اُس دور کے صحرا میں مومن کا مصلح نوید
غالب نے کہا جو حال اس مسجدِ ویراں کا

نوید گیلانی شاعر

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

en_USEnglish
en_USEnglish